98

پولیس عوام کی خادم ہے

لودھراں ( ثاقب مشتاق ) پولیس عوام کی خادم ہے اور پولیس نے اپنے عمل اور رویے سے یہ بات ثابت کرنی ہے کہ پولیس صرف جرائم پیشہ افراد کیلئے سخت رویہ اختیار کرے جبکہ عام آدمی کے ساتھ پولیس کا رویہ شائستہ اور اخلاقی ہونا چاہیے ان خیالا ت کا اظہار ڈسٹرکٹ پولیس آفیسرلودھراں ملک جمیل ظفر نے ضلعی پولیس کی سال 2018 ؁ء کی کارکردگی کے حوالے سے بتاتے ہو ئے کیا ملک جمیل ظفر نے کہا کہ امن وامان کے قیام کوضروری بنانے کیلئے ضلعی پولیس تمام دستیاب وسائل بروئے کارلارہی ہے معاشرے کو امن کا گہوارہ بنانے کے لیے پولیس ڈیپارٹمنٹ کے ذمہ داران اور اہلکار فرض شناسی کا مظاہرہ کریں اورجرائم پر قابو پانے کے لئے جدید پولیسنگ سسٹم کو بروئے کار لایا جائے۔ انھوں نے کہا کہ جرائم کوکنٹرول کرنے کیلئے کئے گئے اقدامات کے مثبت تنائج سامنے آئے ہیں علاوہ ازیں عام آدمی کے مسائل کے فوری حل کیلئے روزانہ کی بنیاد پراور مساجدمیں نماز جمعہ کے بعد شہریوں کے مسائل سننے اور کھلی کچہریوں کاانعقاد کیاگیا۔
ڈی پی او ملک جمیل ظفر نے پولیس کی سال 2018 کی کارکردگی رپورٹ جاری کرتے ہوئے بتایا کہ لودھراں پو لیس نے2018 کے دوران5 کروڑ51 لاکھ سے زائد کا مال مسروقہ برآمد کرو کے مالکان کے حوالے کیا گیا جس میں موٹر سائیکل ، ، مویشی اور گھریلو سامان وغیرہ بھی شامل ہے ۔لودھراں پولیس نے محنت اور جانفشانی کے ساتھ کام کرتے ہوئے2613اشتہاری مجرمان کو گرفتار کیا جن میں Aکیٹگری کی299اورBکیٹگری کی2314شامل ہیں۔سال 2018میں اسلحہ کے 297 مقدمات درج کر کے 199پسٹل ،15کاربین ،15ریوالور،09کلاشنکوف ، 37بندوق ،25را ئفل ،2ماوزر،1خنجراور1007گو لیاں برآمد کی۔ منشیات کے 847مقدمات درج کر کے 118کلو چرس،ہیروئن 605گرام،افیون 1کلو 200گرام،50.430کلو بھنگ،25795بوتل شراب ، 12558لیٹر لہن ، 139چالوبھٹیاں شراب اور132شرابیوں کو گرفتار کیا۔ سال 2018میں مختلف جرائم میں ملوث52گینگ کو ٹریس کر کے 164گینگ کے ممبران کو گرفتار کر کے تقریبا 2 کروڑ 16لاکھ 76ہزار 370روپے مالیت کا مال مسروقہ بر آمد کیا گیا۔ جواء جیسی لعنت کو ختم کرنے کے لیے جواء خانہ پر چھاپے مارے گئے اور 139 مقدمات درج کر کے 716ملزمان گرفتار کیے گئے اور ملزمان کے قبضہ سے تاش ، لڈو اور داؤ پر لگی ہوئی رقم قبضہ میں لی گئے اور ملزمان کو جیل بھجوایا گیا۔ ایمپلی فائر اور ساؤنڈ کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف 145مقدمات درج کر کے145ملزمان کو گرفتار کیا گیا ۔سیکورٹی کے انتظامات ناقص ہونے پر41مقدمات درج کر کے41ملزمان کو گرفتار کیا گیا۔اشتہاریوں کو پناہ دینے کے سلسلہ میں168ملزمان کے خلاف مقدمات درج کرکے168ملزمان کو گرفتار کیا گیا۔ نیشنل ایکشن پلان کے تحت کرایہ داری کے 63مقدمات درج کر کے 63ملزمان کو گرفتار کیا گیا۔قتل کے 40مقدمات میں سے 30کو ٹریس کر کے 80ملزمان کا چالان مرتب کر کے جوڈیشل کرایا گیا۔اقدام قتل کے 45مقدمات میں سے 42کو چالان کر کے 133ملزمان کو جوڈیشل کیا گیا۔